جسم پر کاربونیٹیڈ مشروبات کے اثرات

Effects Of Carbonated Drinks On The Body.

دنیا بھر میں سب سے زیادہ استعمال ہونے والا مشروب سوفٹ ڈرنک ہے۔ لیکن کوئی شخص یہ نہیں جانتا کہ سافٹ ڈرنک آپ کے جسم میں کیا ریکشن کرتا ہے۔  جیسے ہی آپ سافٹ ڈرنک پیتے  ہیں تو لبلبہ اس سے آگاہ ہوجاتا ہے اور چینی کے لیے فوری طور پر انسولین بنانے لگتا ہے۔ سافٹ ڈرنک پینے کے  صرف بیس منٹ کے اندر بلڈ شوگر بڑھ جاتا ہے اور جگر چینی کو چربی میں بدل کر ذخیرہ کرلیتا ہے۔ سوفٹ ڈرنک پینے کے 45 منٹ بعد اس میں موجود کیفین مکمل طور پر جسم میں جذب ہوجاتا ہے۔ جس کے نتیجے میں بلڈ پریشر بھی بڑھ جاتا ہے. جبکہ جسم زیادہ ڈوپامائن بنانے لگتا ہے۔ جس سے دماغ میں ایک خوشی کا احساس پیدا ہو جاتا ہے۔

ایک گھنٹے کے بعد جسم کو بلڈ شوگر کی سطح گرنے کا سامنا ہوتا ہے۔ جس کی وجہ سے آپ کو دوسری سافٹ ڈرنک کی طلب لگتی ہے۔ اس طرح کرتے آپ کی عادت بن جاتی ہے۔

کینسر کا خطرہ۔

عالمی ادارہ صحت کی ایک تحقیق نے یہ ثابت کیا ہے کہ, سافٹ ڈرنک اور کینسر کے درمیان بہت گہرا تعلق ہے۔ اس رپورٹ کے مطابق ہفتے میں دو دفعہ سافٹ ڈرنکس کا استعمال  لبلبےکے کینسر کا خطرہ بڑھا دیتا ہے ۔ اسی طرح روزانہ ایک مشروب کا استعمال مردوں میں مثانے کے کینسر کا خطرہ 40 فیصد تک بڑھا سکتا ہے۔ جبکہ ڈیڑھ کین کا روزانہ استعمال خواتین میں بریسٹ کینسر کا امکان بڑھاتا ہے۔

.ذیابیطس

یہ ہر کوئی جانتا ہے کہ بہت زیادہ میٹھا ذیابیطس ٹائپ ٹو کا باعث بنتا ہے۔ عالمی ادارہ صحت کی رپورٹ کے مطابق د نیا میں ذیابیطس کے مریضوں کی تعداد سافٹ ڈرنکس کے استعمال کی وجہ سے زیادہ ہوگئی ۔ اگر آپ اس بیماری سے بچنا چاہتے ہیں تو اپنی روزمرہ کی زندگی میں کم سے کم سافٹ ڈرنکس کا استعمال کریں۔

جگر کی بیماری۔

تحقیق کے مطابق اگر آپ روزانہ سافٹ ڈرنکس کا استعمال کرتے ہیں تو آپ کو جگرکا مسئلہ بہت آسانی سے ہو سکتا۔ اس کی وجہ یہ ہے کے سافٹ ڈرنک جسم میں چربی کی مقدار زیادہ کر دیتا ہے۔

.موٹاپا

مشروبات کے روزانہ استعمال سے آپ کے جسم میں چربی کی مقدار زیادہ بڑھ جاتی ہے۔ چربی میں اضافے کی اصل وجہ چینی کی مقدار میں اضافہ ہونا ہے اور چربی کے بڑھنے کی وجہ سے بہت سی بیماریاں بھی آپ کے جسم میں پیدا ہوتی ہیں.اگر آپ ان سے بچنا چاہتے ہیں توکولڈ ڈرنک کا کم سے کم استعمال کریں۔

“مزید پڑھیں “جسم پر شوگر کے منفی اثرات۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.