Reason Of Heart Attack.

آج کل کے دور میں دل کا دورہ پڑ نا ایک بہت اہم بات ہو گئی ہے. دل کے دورے کہ کچھ وجوہات ہر کسی کو معلوم ہوتے ہیں.مثال کے طور پہ لوگوں کو پتہ ہوتا ہے کہ موٹاپا، تباکو نوشی، ذیابیطس، سست طرز زندگی اور بلڈ پریشر دل کے دورے کا خطرہ بڑھا دیتا ہے۔آج میں آپ کو اس ٹوپیک میں چندغیر معمولی وجوہات کے بارے میں بتاؤں گا۔ جو دل کے دورے کی وجہ بن سکتے ہیں۔

دمہ

دمہ ایک پھیپھڑوں کا مرض ہے.اس مرض میں مبتلا افراد کو ہارٹ اٹیک کا خطرہ 70 فیصد تک بڑھ جاتا ہے.کچھ لوگ دمہ کو کنٹرول کرنے کے لئے  ان ہیلر کا استعمال کرتے ہیں لیکن پھر بھی دل کے دوڑے کا خطرہ کم نہیں ہوتا. ان ہیلر کے باعث اکثر افراد سینے کی گھٹن کو نظر انداز کردیتے ہیں جو کہ ہارٹ اٹیک کی ایک ابتدائی علامت بھی ہے۔

فضائی آلودگی

آج کل کے دور میں فضائی آلودگی کی شرح بہت زیادہ ہوچکی ہے. جس کی وجہ سے آج کے دور میں ہارٹ اٹیک عام ہو گیا ہے.فضائی آلودگی زیادہ ہونے کی وجہ سے لوگوں کو سانس لینے میں تکلیف ہوتی ہے. جس کی وجہ سے ہارٹ اٹیک کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

سخت جسمانی محنت

ویسے تو ورزش انسان کہ عمر میں اضافہ کرتے ہیں، لیکن اکثر اوقات یہی ورزش ہارٹ اٹیک کی وجہ بن جاتے ہیں۔ جب ورزش کرتے ہیں تو آپ کے جسم میں خون کی رفتار اور دل کی دھڑکن تیز ہو جاتے ہیں۔اگر وہ قابو سے باہر ہو جائیں تو ہارٹ اٹیک کا خطرہ بڑھ جاتا ہے.اس لیے کہا جاتا ہے،کی پرورزش یا سخت جسمانی محنت کرتے دوران کچھ دیر آرام بھی کرنا چاہیے تاکہ آپ کی دل کی دھڑکن نورمل ہو سکے۔ 

نیند کی کمی

اگر نیند کی کمی ہو تو تھکاوٹ کے ساتھ چڑچڑے پن کا سامنا بی ہوتا ہے.نیند کی کمی کی وجہ سے  دل کے دورے کا خطرہ بھی بھر جاتا ہے. ایک تحقیق نے یہ ثابت کیا ہے کہ جو لوگ چھ گھنٹے سے کم سونے کے عادی ہوتے ہیں،ان لوگوں میں ہارٹ اٹیک کا خطرہ عام افراد کے مقابلے میں دوگنا ہوتا ہے۔ایک تحقیق نے یہ ثابت بھی کیا ہے، کہ نیند کی کمی بلڈ پریشر میں اضافہ کا باعث بھی بنتی ہے۔ جس کی وجہ سے دل کے دورہ کا خطرہ بھی بڑھ جاتا ہے۔ 

زیادہ کھانا

جو لوگ زیادہ کھانا کہتے ہیں،ایک امریکی تحقیق کے مطابق ان میں امراض قلب کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ زیادہ مقدار میں خوراک جسم میں متعدد ایسے عناصر کو حرکت میں لے آتی ہے جو دل کے دورے کا باعث بن سکتے ہیں۔ زیادہ مقدار میں خوراک کا کھانا دل کی دھڑکن اور بلڈ پریشر کو بڑھا دیتا ہے, جبکہ کھانے میں شامل فیٹی ایسڈز دوران خون میں شامل ہوجاتے ہیں یا انسولین کی شرح بڑھا دیتے ہیں جو دل کی شریانوں کو سکیڑ دیتے ہیں اور ہارٹ اٹیک کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

کافی

کافی بلڈ پریشر کو کچھ وقت کے لیے اوپر لے جاتی ہے۔ جس کی وجہ سے دل کے دورے کا خطرہ بھر جاتا ہے۔ امریکن ہارٹ ایسوسی ایشن کے مطابق کافی میں موجود کیفین کی زیادہ مقدار کا استعمال امراض قلب کا خطرہ بڑھاسکتا ہے تاہم اعتدال میں رہ کر جیسے روزانہ ایک یا 2 کپ کافی پینا نقصنا نہیں پہنچاتا۔

Leave a Comment