Vitamin

بہت سے لوگ سمجھتے ہیں کہ ملٹی وٹامن گولیاں کھاتے رہنے سے وہ متوازن غذا اور صحت مند عادات سے بے نیاز ہو جاتے ہیں ۔ انھیں معلوم ہی نہیں کہ وٹامن کیا ہوتے ہیں ؟ ان کی کتنی قسمیں ہیں اور کون سی قسم کن حالات میں استعمال کی جاتی ہے ۔ حقیقت یہ ہے کہ کچھ عرصہ پہلے تک سائنسدانوں کا یہ خیال تھا کہ ہر وہ غذا جس میں کاربو ہائیڈریٹ، پروٹین, چربی اور بعض معدنی اجزاء شامل ہوں متوازن کہلاتی ہے ۔ لیکن بعد میں چوہوں پر کچھ تجربات کرنے سے معلوم ہوا کہ وہ اسی متوازن غذا کھانے کے باوجود وہ بیمار پڑ جاتے ہیں اور ان میں سے کچھ مر بھی گئے۔ اس مشاہدے سے سائنسدانوں نے یہ نتیجہ نکالا کہ اس غذا کوصحیح معنوں میں متوازن بنانے کے لیے مزید کسی جزو کی ضرورت باقی ہے ۔ تجربات جاری رہے اور یہ معلوم کیا گیا کہ اگر اس غذا میں تھوڑے سے دودھ کا اضافہ کردیا جائے تو وہ بہتر ہو جاتی ہے اور بیاری اور موت کے امکانات کم ہوجاتے ہیں ۔ البتہ یہ بات سمجھ میں نہیں آتی تھی کہ اتنا تھوڑا سا دودھ جس میں چربی کی بہت کم مقدار شامل ہوتی ہے غذا کو کس طرح ٹھیک کردیا ہے ۔ رفتہ رفتہ یہ معلوم ہوا کہ چربی کے علاو دودھ میں نهایت خوفیا مقدار میں کچھ کیمیکلز بھی شامل ہوتے ہیں ۔ سائنسدانوں نے ان کووٹامن کے نام سے پکارا ۔ اردو میں وہ ” حیاتین “ کہلاتے ہیں کیونکہ ان پر ہماری حیات کا وارو دار ہے ۔

Leave a Comment