New Corona Virus Vaccine Approved.

عالمی ادارہ صحت نے کورونا کی برطانیہ اور جنوبی افریقا میں سامنے آنے والی نئی شکل کے خلاف آکسفورڈ یونیورسٹی اور آسٹرازینیکا کی تیار کردہ کورونا ویکسین کی منظوری دیدی۔ عالمی ادارہ صحت کہ ماہرین نے بیان میں کہا کہ اس ویکسین کے ایک اور ورژن آسٹر زینیکا (جنوبی کوریا) اور سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کی بھی منظوری دی گئی ہے. آکسفورڈ یونیورسٹی اور آسٹرازینیکا کی تیار کردہ یہ کورونا ویکسین دوسری ویکسین فائزر کے مقابلے میں سستی بھی ہے اور اس کے علاوہ اس کو عام درجہ حرارت میں بھی لکھا جا سکتا ہے. عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ اس ویکسین کو ان ممالک کے لیے بہترین قرار دیا گیا ہے جن میں کرونا وائرس کی مختلف اقسام موجود ہیں۔ 

اس بارے میں ڈبلیو ایچ او کے ڈائریکٹر جنرل ٹیڈروس ایڈونوم گیبریس کا کہنا تھا کہ اب ہمارے پاس دنیا بھر میں کرونا وائرس کے مریضوں کے لیے ویکسین موجود ہے لیکن ہمیں اب بھی پیداوار بڑھانے کی ضرورت ہے کیونکہ دن بدن کرونا وائرس کے مریضوں کی تعداد زیادہ ہوتی جا رہی ہے اور بہت سے لوگ نئے کرونا وائرس کی اقسام کے شکار بھی ہو رہے ہیں. جو کرونا وائرس سے بھی زیادہ خطرناک ہے۔

سربراہ عالمی ادارہ صحت کا کہنا تھا کہ زیادہ سے زیادہ کمپنیوں سے گزارش ہے کہ وہ کمپنیاں اپنی ویکسین کی منظوری کے لیے ڈبلیو ایچ او میں درخواست جمع کرائیں۔

واضح رہے کہ عالمی ادارہ صحت اس سے قبل فائزر اور بائیوٹیک کی تیار کردہ کورونا ویکسین کے استعمال کی منظوری دے چکا ہے تاہم دنیا بھر میں ویکسین کی ضرورت کو مدنظر رکھتے ہوئے مزید ویکسین کی منظوری بھی دی جائے گی۔

“مزید پڑھیں “پاکستان میں چینی ویکسین سیانو۔

Leave a Comment