خوبصورت جسم کا دشمن موٹاپا

خوبصورت نظر آنے کی خواہش ہر انسان میں ہوتی ہے۔ زمانہ حال میں جسم کو خوبصورت رکھنے کے لیے لوگ جتنے جتن کرتے ہیں وہ اس بات کی واضح عکاسی کرتے ہیں صرف خواتین ہی نہیں بلکہ مرد بھی اپنی ظاہری خوبصورتی اور فٹنس کے بارے میں بہت حساس ہوتے ہیں۔ بعض اوقات تو ایسا دکھائی دیتا ہے کہ معاشرے میں ایک دوسرے سے بڑھ کر خوبصورت اور پرکشش نظر آنے کی دوڑ لگی ہوئی ہے۔ مجموعی طور پر دیکھا جائے تو خوبصورتی صرف گوری رنگت اور پرکشش نقوش کا ہی نام نہیں بلکہ ان سب سے اہم اور بنیادی اہمیت کی حامل چیز ہے انسان کا متناسب جسم اور خوبصورت سراپا۔ خالی میک اپ کر لینے سے جسم کا حقیقی حسن اجاگر نہیں ہوتا بلکہ اصل خوبصورتی حسین سراپے  کی مرہون منت ہوتی ہے۔

صاف خون اور مضبوط پٹھے بھی خوبصورتی میں اضافے کا باعث ہوتے ہیں جسم میں صاف خون کی مناسب مقدارچہرے پر تازگی اور شگفتگی لاتی ہے جب کہ اس کے برعکس وہ لوگ جن کا خون صاف نہیں ہوتا یا ان کے جسموں میں خون کی کمی ہوتی ہے ان کے چہرے ذردی مائل پیلے ہوجاتے ہیں۔ خون کی کمی سے چہرے کی رونق ختم ہو جاتی ہے اور آنکھیں ہر وقت تھکی تھکی  دکھائی دیتی ہیں۔ لہذا کوشش کرنی چاہیے کہ گورا کرنے کے بجائے مجموعی خوبصورتی حاصل کرنے کی کوشش کی جائے۔ اور اس سلسلے میں مہنگی مہنگی کریموں اور فیشل مساج پر بےجا رقم ضائع کرنے کے بجائے اچھی اور متوازن غذا استعمال کی جائے اورباقاعدگی سے ورزش کا اہتمام کیا جائے۔ ہر روز واک کرنے بھی صحت اور خوبصورتی کا ضامن ہوتا ہے ایسے میں گھر کے قریب کوئی لان یا پارک نہ بھی میسر ہو تو صحن یا چھت پربھی واک کی جا سکتی ہے۔ بس ضرور ت ہے توصرف کام میں باقاعدگی لانے کی۔ ایک ورزش جو تمام خواتین گھر میں باآسانی کر سکتی ہیں اور یہ ان کے جسم کی ساخت کوسڈول اور خوبصورت رکھنے میں معاون بھی ثابت ہوسکتی ہے۔ 

 

 

Leave a Reply

Your email address will not be published.